")
اسلامی معاشره و سماح میں معامله کی کیفیت
معصومین

امام صادق عليہ السلام سے اسلامی سماج کے بارے میں معاملات کی انجام دهی کے متعلق بے شمار روایات نقل هوئی هیں . مثال کے طور پر آپ فرماتے هیں که مسلمان انسان کو چاهئے : ایک مناسب و معقول اندازه کے مطابق نفع حاصل کرے، نه که اس سے زیاده . آپ کے کلام کا مطلب یه هے که جو نفع تم لے رهے هو وه کم رهے بهت زیاده نفع نه لو اور ان کے همدردی سے پیش آؤ . [1]   

یه هے امام صادق عليہ السلام کا نظریه، جب که هم دیکهتے هیں بہت سے لوگ جس وقت کسی چیز کی کمی کو دیکهتے هیں که فلاں چیز کمیاب هے اور اس کی ضرورت بہت زیاده هے، تو اس چیز کا احتکار اور ذخیره اندوزی کرنے لگتے هیں تاکه لوگوں پر سختی و دباؤ بنائیں، جس سے ان کا جیب خالی کروا لیں اور زیاده سے زیاده نفع حاصل کریں، اس طرح کے افراد صرف اپنے ذاتی مفاد کو نظر میں رکهتے هیں .

 

[1] . الحياة، ج3، ص236.